ماہِ رجب کی فضیلت و اہمیت

جون 7, 2011 at 15:24 تبصرہ کریں

نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلّم نے فرمایا یہ اللہ کا مہینہ ہے
فتح مکہ سے قبل جب مومنین مدینہ منورہ سے مکہ معّظمہ کی جانب جانے لگے تو انہوں نے کہا کہ ہمیں ڈر ہے کہ کہیں کفار ہم سے عزت والے مہینے میں نہ لڑیں، اس پر اللہ تعالٰی نے یہ آیت مبارکہ نازل فرمائی.
ترجمہ: بے شک مہینوں میں گنتی اللہ کے نزدیک بارہ ہے، اللہ کی کتاب میں جس دن اللہ نے آسمانوں اور زمین کو پیدا فرمایا ان میں سے چار قابلِ عزت ہیں.
چار عزت والے مہینے ذیعقد، ذی الحجہ، محّرم اور رجب ہیں. رجب "ترجیب” سے مشتق ہے. اہلِ عرب کے ہاں "ترجیب” تعظیم کے معنی میں استعمال ہوتا ہے، یوں رجب کے معنی حد درجہ تعظیم بزرگی، عزت کے علاوہ بے ضرر اور بے زبان ہیں.
سات دنوں میں دو دن اور بارہ مہینوں میں سے چار ماہ نہایت محترم ہیں، جمعہ اور پیر کے دنوں کو دیگر دنوں پر فضیلت حاصل ہے اور رجب، ذیعقد، ذی الحجہ اور محرم کو حرام مہینے قرار دیا گیا ہے.
حضرت عکرمہ، حضرت ابن عباس رضی اللہ تعالٰی عنہہ روایت کرتے ہیں کہ نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلّم نے ارشاد فرمایا، ” رجب اللہ کا مہینہ ہے، شعبان میرا اور رمضان میری اُمّت کا مہینہ ہے.”
ماہِ رجب کو ہمیشہ اور ہر مزہب میں عزت و حرمت حاصل رہی ہے. حدیث مبارکہ میں نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلّم نے ارشاد فرمایا، "سُنو رجب رجب عزت والے مہینوں میں سے ہے، اسی میں حضرت نوح علیہ السلام نے کشتی ہی میں روزہ رکھا تھا اور اپنے ساتھیوں کو بھی روزہ رکھنے کا حکم دیا تھا تو اللہ نے ان کو نجات دی اور ڈوبنے سے بچا لیا اور زمین کو طوفان کے سبب کفروسرکشی سے پاک کر دیا.
اس حدیث مبارکہ سے واضح ہوتا ہے کہ ماہ رجب کی عظمت و حرمت و فضیلت پچھلے مزاہب سے مسلّمہ چلی آ رہی ہے اور آج بھی اس میں کچھ فرق نہیں آیا. اس مہینے میں کسی قوم پر اللہ تبارک و تعالٰی نے گزشتہ امتوں کو باقی مہینوں میں تو عزاب میں مبتلا کیا لیکن اس ماہ میں کسی امت کو عزاب نہیں دیا. اسے شہر اللہ الاصم اس لئے بھی کہا جاتا ہے کیونکہ حضرت عثمان رضی اللہ تعالٰی عنہہ سے مروی ہے کہ ماہِ رجب کا چاند طلوع ہوا تو آپ صلی اللہ علیہ وسلّم جمعہ کے دن منبر پر تشریف فرما ہوئے اور ارشاد فرمایا، ” سنو یہ اللہ کا بہرہ مہینہ ہے، یہ تمھاری زکٰوۃ کا مہینہ ہے، لہٰزا جس پر قرض ہو وہ اپنا قرض ادا کرنے پر بقیہ مال کی زکٰوۃ ادا کرے”
حضرت شیخ عبدالحق محدث دہلوی رضی اللہ تعالٰی عنہہ ثبت ہالنسہ میں نحایہ کے حوالے سے تحریر فرماتے ہیں، اللہ تعالٰی نے رجب کو اپنا مہینہ قرار دیا ہے کیونکہ جیسے بہرہ آدمی کچھ نہیں سنتا یہ مہینہ بھی ہتھیاروں کی آوازیں نہیں سنتا. اسی لئے دور جہالت میں کفار بھی ان محترم مہینوں کا احترام کرتے اور کوئی کسی پر تلوار نہ چلاتا، جنگیں رُک جاتیں. امام رافعی تحریر کرتے ہیں کہ رجب یقیناً اللہ تعالٰی کا مہینہ ہے. اسے بہرہ اس لئے کہتے ہیں کہ زمانہ جاہلیت کے لوگ بھی اس ماہ جنگ و جدل نہ رکھتے اور اپنے ہتھیاروں کو ہاتھ نہیں لگاتے تھے. پورا مہینہ امن و امان میں رہتا اور کوئی کسی سے خوفزدہ نہ ہوتا تھا. ” اس مہینے کو مطہر کہنے کی وجہ یہ ہے کہ یہ روزہ دار کو گناہوں اور خطاؤں سے پاک کر دیتا ہے. حضرت انس بن مالک سے روایت ہے کہ جب رجب کا مہینہ آتا تو حضور صلی اللہ علیہ وسلّم دعا فرماتے:
ترجمہ: ” اللہ ہمارے رجب اور شعبان کو با برکت بنا اور ہمیں رمضان تک پہنچا”

Entry filed under: Islam : اسلام, Islamic Months: اسلامی مہینے. Tags: , , , , .

بندوں کے حقوق اُردو شاعر: حسرت موہانی

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Google photo

آپ اپنے Google اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ لاگ آؤٹ /  تبدیل کریں )

Connecting to %s

Trackback this post  |  Subscribe to the comments via RSS Feed


A Place For Indian And Pakistani Chatters

Todd Space Social network

زمرے

RSS Urdu Sad Poetry

  • GHAZAL BY SAGHAR SIDDIQUI مارچ 1, 2015
  • چلو اک بار پھر سے اجنبی بن جائیں ہم دونوں فروری 28, 2015
    چلو اک بار پھر سے اجنبی بن جائیں ہم دونوں نہ میں تم سے کوئی امید رکھوں دل نوازی کی نہ تم میری طرف دیکھو غلط انداز نظروں سے تمہیں بھی کوئی الجھن روکتی ھے پیش قدمی سے مجھے بھی لوگ کہتے ہیں کے یہ جلوئے پرائے ہیں میرے ہمراہ اب ہیں رسوائیاں میرے ماضی […] […]
  • Dil main Thkana اکتوبر 6, 2012
    درد کا دل میں ٹھکا نہ ہو گیا زندگی بھر کا تماشا ہو گیا مبتلائے ھم بھی ہو گئے ان کا ہنس دینا بہانا ہو گیا بے خبر گلشن تھا میرے عشق سے غنچے چٹکے راز افشا ہو گیا ماہ و انجم پر نظر پڑنے لگی ان کو دیکھے اک زمانہ ہو گیا تھے نیاز […] […]
  • Ghazal-Sad Poetry ستمبر 9, 2012
    Ghazal-Sad Poetry
  • Ik tere rooth janne say اگست 28, 2012
    تیرے روٹھ جانے سے کوئی فرق نہیں پڑے گا پھول بھی کھلیں گے تارے بھی چمکیں گے مینا بھی برسے گی ھاں مگر کسی کو مسکرانہ بھول جائے گا "اک تیرے روٹھ جانے سے”
  • yadoon ka jhoonka اگست 13, 2012
    یادوں کا اک جھونکا آیا ھم سے ملنے برسوں بعد پہلے اتنا رٰوئے نہیں تھے جتنا روٰئے برسوں بعد لمحہ لمحہ گھر اجڑا ھے، مشکل سے احساس ہوا پتھر آئے برسوں پہلے ، شیشے ٹوٹے برسوں بعد آج ہماری خاک پہ دنیا رونے دھونے بیٹھی ھے پھول ہوئے ہیں اتنے سستے جانے کتنے برسوں بعد […] […]
  • Log Mosam Ki tarah Kaisay Badal Jaty Hain-Urdu Gazhal جولائی 29, 2012
    Log Mosam Ki tarah Kaisay Badal Jaty Hain-Urdu Gazhal
  • Mera Qalam Meri Soch Tujh Se Waabasta – Romantic Urdu Poetry جولائی 21, 2012
    MERA QALAM MERI SOCH TUJH SE WAABASTA – ROMANTIC URDU POETRY Mera qalam meri soch tujh se waabasta Meri to zeest ka her rang tujh se waabasta Lab pe jo phool they khushiyon k sab tere hi they Aaj is aankh k aansu b tujh se waabasta Hum kisi b rah pe chalen paas tere […]
  • Kabhi Khawabon Main Milain-Pakistani writers جولائی 12, 2012
    Kabhi Khawabon Main Milain-Pakistani writers
  • Ghazal-Sad Poetry جولائی 4, 2012
    Ghazal-Sad Poetry

%d bloggers like this: