تھے کچھ ارماں میرے بھی….

مئی 12, 2011 at 06:34 1 comment

ہمیشہ کی طرح آج بھی باغ میں ہر چیز اپنی جگہ موجود تھی. سر کے اوپر وہی نیلا آسمان، پاؤں کے نیچے نرم نرم گھاس اور ارد گرد لوگوں کی چہل پہل، ان خوبصورت نظاروں کو جتنا بھی دیکھو جی نہیں بھرتا لیکن آج تو یہ نظارے مزید حسین لگ رہے ہیں. نیلے آسمان پر خوب بادل نظر آ رہے ہیں اور ان بادلوں کی وجہ سے ٹھنڈی ٹھنڈی ہوا چل رہی ہے. جب یہ ہوا درختوں کو چھوتی ہوئی مجھ تک پہنچتی ہے تو مزید  ٹھنڈی ہو چکی ہوتی ہے اس لئے اس ہوا کے چھونے سے ایک تازگی کا احساس ہو رہا ہے. یوں تو یہ باغ سبزے کی وجہ سے بہت حسین ہے مگر آج اس خوبصورت موسم نے باغ کی خوبصورتی کو چار چاند لگا دئیے ہیں.
میں باغ میں بیٹھی ان نظاروں سے لطٍف اندوز ہو رہی تھی کہ اچانک میری نظر ایک بوڑھی عورت پر پڑی جو شاید 75-70 سال کی تھیں. ان کی جھکی کمر اور چہرے پر موجود بے بسی کو دیکھ کر میری نظریں ایک پل کو ٹھہر گئیں.
اور میں باغ کی ساری خوبصورتی  کو یکسر بھول گئی. پھر نا جانے کیوں میری نظریں اسے تلاش کرنے لگیں جس کے ساتھ یہ خاتون آئیں تھیں. مگر ان کے ادر گرد مجھے ان کے گھر کا کوئی فرد دکھائی نہ دیا. ویسے ان کے ساتھ ایک خاتون موجود تھی. یہ خاتون شاید ملازمہ تھی. یہ بوڑھی عورت اور ان کی ملازمہ چھوٹے چھوٹے قدموں سے میری طرف بڑھ رہی تھیں. جب یہ دونوں میرے بالکل قریب پہنچیں تو بوڑھی عورت مجھ سے پوچھنے لگی، “بیٹی کیا میں تمہارے پاس اس اسٹول پر بیٹھ جاؤں؟ بس میں ہی بیٹھوں گی. یہ باغ کا چکر لگانے چلی جائے گی.” انہوں نے عاجزی سے پوچھا.
میں جھٹ سے بولی”جی بڑی آنٹی آپ میرے پاس بیٹھ جائیں.”
“مجھے بزرگوں سے باتیں کرنا بہت پسند ہے.”
میں نے دل ہی دل میں سوچا ان آنٹی سے باتیں کرنے کا مزہ آئے گا.
جلد ہی ہمارے درمیان گفت و شنید کا سلسلہ شروع ہو گیا. باتوں ہی باتوں میں مجھے پتہ چلا کہ بڑی آنٹی نے شادی نہیں کی. مجھے اس بات پر بہت حیرت ہوئی اور میں بڑی آنٹی سے وجہ پوچھنے لگی. پہلے تو انہوں نے مجھے ٹالنے کہی بہت کوشش کی مگر پھر میرے اصرار پر وجہ بتانے کے لئے راضی ہو گئیں. اب میں آپ کو ان کی داستان ان کی زبانی سناؤں گی…
“ہم دو بہن بھائی تھے. میرا بھائی میرے سے سترہ (17)سال بڑا تھا. والد میری پیدائش سے چند ماہ قبل ایک ٹریفک حادثہ میں جاں بحق ہو گئے اور والدہ میری پیدائش کے وقت وفات پا گئیں. یوں ہم دونوں بہن بھائی اس دنیا میں تنہا رہ گئے. بھائی نے ملازمت شروع کر لی اور میری دیکھ بھال کے لئے ایک  ملازمہ رکھ لی. وقت گزرتا گیا اور میں 15 سال کی ہو گئی. اب ہم بہن بھائی نے سوچا کہ برسوں کی تنہائیوں کو ختم کیا جائے. لہٰزا بھائی نے شادی کر لی. میری بھابھی بہت خوش مزاج اور اچھی تھی. 5 سالوں میں خدا تعالٰی نے انہیں دو بیٹے اور دو بیٹیاں عطا کیں. لیکن شاید اب خوشیاں ہمارے نصیب میں نہ تھی. تبھی وقت کا ایک پہیہ ایک بار پھر سے گھوما اور خدا نےمیرے بھائی اور بھابھی کو اپنے پاس بلا لیا. اب بھائی کے چاروں چھوٹے چھوٹے بچوں کی زمہ داری مجھ پر تھی. میں نے ان کی پرورش کے لئے محلے کے لوگوں کے کپڑے سینے شروع کر دئیے. جب بچے تھوڑے بڑے ہوئے تو دونوں لڑکوں نے ملازمت کرنا چاہی مگر مجھے یہ گراں گزرا کیونکہ میں ان بچوں کو پڑھا لکھا کر اونچے عہدوں پر فائز دیکھنا چاہتی تھی. مجھے ان بچوں سے بہت پیار تھا. ان میں مجھے اپنے بھائی کی جھلک نظر آتی تھی. لہٰزا میں نے دن دگنی رات چوگنی محنت کر کے اپنے خواب کو پورا کیا، انہیں خوب پڑھایا لکھایا . پڑھائی مکمل کرتے ساتھ ہی دونوں لڑکوں کو اچھی ملازمت مل گئ. اب میں دونوں لڑکیوں کی شادی کی فکر کرنے لگی. مجھے اکثر لوگ کہا کرتے تھے تم نے بچوں کی اچھی پرورش کر کے اپنا فرض پورا کیا اب یہ خود کو سنبھالنے کے قابل ہیں لہٰزا تم شادی کر لو. اپنی شادی کا سوچ کر میرے ذہن میں برے برے خیال آتے.
میں سوچتی تھی کی اگر میں شادی کر کے اس گھر سے چلی گئی تو ان بچوں کا کیا ہو گا. ان کی شادیاں، گھر کو سنبھالنا  اور اسی طرح کی دوسری ذمہ داریوں کے بارے میں سوچنے لگتی.
 میرے لئے تو بس یہی بچے میری زندگی تھے. آہستہ آہستہ میں نے چاروں بچوں کی شادیاں کر دیں. بیٹیاں بیدا کر دیں اور بہوئیں گھر لے آئی. میں نے سوچا کہ میری دو بیٹیوں کی کمی یہ دونوں بہوئیں پوری کر دیں گی. مگر قسمت کا لکھا کچھ اور ہی تھا. شادی کے بعد چاروں بچوں نے نظریں پھیر لیں. بیٹیوں نے گھر آنا چھوڑ دیا اور بیٹے کبھی آ کر میرا حال نہیں پوچھتے. بہوئیں سارا دن مجھے میرے کمرے سے باہر نکلنے نہیں دیتیں اور اپنے بچوں کو میرے ساتھ بات کرنے سے بھی منع کرتی ہیں. بس روز ایک ملازمہ کے ہاتھ میرے کمرے میں کھانا بھجوا دیا جاتا ہے اور کچھ کہوں تو کہتی ہیں کہ آپ ہماری ساس نہیں جو ہم پر حکم چلائیں. آپ تو خدا کا شکر ادا کریں کہ ہم آپ کو اپنے گھر رہنے دے رہی ہیں. اب میں سوچتی ہوں کہ کاش بچوں کی شادی کرنے سے پہلے خود اپنی شادی کروا لی ہوتی.

Entry filed under: Urdu Stories : اردو کہانیاں. Tags: , , , , .

نوشی گیلانی نوشی گیلانی کی شاعری

1 تبصرہ Add your own

  • 1. ak  |  مئی 13, 2011 کو 16:49

    so sentimental story

    جواب دیں

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Connecting to %s

Trackback this post  |  Subscribe to the comments via RSS Feed


A Place For Indian And Pakistani Chatters

Todd Space Social network

زمرے

RSS Urdu Sad Poetry

  • GHAZAL BY SAGHAR SIDDIQUI مارچ 1, 2015
    Filed under: Ghazal, Nazam, Saghir Siddiqui, Urdu Poetry Tagged: FAREB, Ghazal, Ghazal by Saghir Siddiqui, NASHEMAN, Pakistani Poetry Writer, QAYAMAT, Sad Urdu Poetry, SAGHAR, Saghir Siddiqui, SHAGOOFAY, SHETAN, TERI DUNIYA MAI YA RAB, Urdu, Urdu Adab, Urdu Poetry, Urdu shayri, ZEEST
  • چلو اک بار پھر سے اجنبی بن جائیں ہم دونوں فروری 28, 2015
    چلو اک بار پھر سے اجنبی بن جائیں ہم دونوں نہ میں تم سے کوئی امید رکھوں دل نوازی کی نہ تم میری طرف دیکھو غلط انداز نظروں سے تمہیں بھی کوئی الجھن روکتی ھے پیش قدمی سے مجھے بھی لوگ کہتے ہیں کے یہ جلوئے پرائے ہیں میرے ہمراہ اب ہیں رسوائیاں میرے ماضی […] […]
  • Dil main Thkana اکتوبر 6, 2012
    درد کا دل میں ٹھکا نہ ہو گیا زندگی بھر کا تماشا ہو گیا مبتلائے ھم بھی ہو گئے ان کا ہنس دینا بہانا ہو گیا بے خبر گلشن تھا میرے عشق سے غنچے چٹکے راز افشا ہو گیا ماہ و انجم پر نظر پڑنے لگی ان کو دیکھے اک زمانہ ہو گیا تھے نیاز […] […]
  • Ghazal-Sad Poetry ستمبر 9, 2012
    Ghazal-Sad PoetryFiled under: Bazm-e-Adab, Ghazal, Meri Pasand, My Collection, Pakistani writers, Picture Poetry, Poetry, Poetry Collection, ROMANTIC POETRY, Sad Poetry, Uncategorized, Urdu, Urdu Khazana, Urdu Magazine, Urdu Poetry, Urdu Point, Urdu Station, Urdu Time, Urdu translation Tagged: ahmed faraz, Bazm-e-Adab, Female Writer, Ikhlaki Kahanian, Imran […]
  • Ik tere rooth janne say اگست 28, 2012
    تیرے روٹھ جانے سے کوئی فرق نہیں پڑے گا پھول بھی کھلیں گے تارے بھی چمکیں گے مینا بھی برسے گی ھاں مگر کسی کو مسکرانہ بھول جائے گا “اک تیرے روٹھ جانے سے” Filed under: Nazam, Urdu Poetry Tagged: Faraq, ik teray, Indian, Muhabbat, Muskurana, Nahi, Nazam, nazm, Pakistani, Poem, Poetry, Romantic Urdu Poetry, […] […]
  • yadoon ka jhoonka اگست 13, 2012
    یادوں کا اک جھونکا آیا ھم سے ملنے برسوں بعد پہلے اتنا رٰوئے نہیں تھے جتنا روٰئے برسوں بعد لمحہ لمحہ گھر اجڑا ھے، مشکل سے احساس ہوا پتھر آئے برسوں پہلے ، شیشے ٹوٹے برسوں بعد آج ہماری خاک پہ دنیا رونے دھونے بیٹھی ھے پھول ہوئے ہیں اتنے سستے جانے کتنے برسوں بعد […] […]
  • Log Mosam Ki tarah Kaisay Badal Jaty Hain-Urdu Gazhal جولائی 29, 2012
    Log Mosam Ki tarah Kaisay Badal Jaty Hain-Urdu Gazhal Filed under: Bazm-e-Adab, Dil Hai Betaab, Meri Pasand, My Collection, Nazam, Pakistani writers, Picture Poetry, Poetry Collection, Sad Poetry, Urdu Khazana, Urdu Magazine, Urdu Poetry, Urdu Point, Urdu Station, Urdu Time, Urdu translation Tagged: Bazm-e-Adab, Best Urdu Poetry, Dil Hai Betaab, Marsia Sad P […]
  • Mera Qalam Meri Soch Tujh Se Waabasta – Romantic Urdu Poetry جولائی 21, 2012
    MERA QALAM MERI SOCH TUJH SE WAABASTA – ROMANTIC URDU POETRY Mera qalam meri soch tujh se waabasta Meri to zeest ka her rang tujh se waabasta Lab pe jo phool they khushiyon k sab tere hi they Aaj is aankh k aansu b tujh se waabasta Hum kisi b rah pe chalen paas tere […]
  • Kabhi Khawabon Main Milain-Pakistani writers جولائی 12, 2012
    Kabhi Khawabon Main Milain-Pakistani writers Filed under: Pakistani writers Tagged: ahmed faraz, BEST URDU NOVELS, Female Writer, Ikhlaki Kahanian, Imran Series, Islamic Books, Islamic Duayen, Jasoosi Duniya, JASOOSI KAHANIAN, Jasoosi Novels, Mazhar Kaleem, Meri Pasand, My Collection, Night Fighter, Pakistani Writers, PARVEEN SHAKIR, Poetry Collection, roman […]
  • Ghazal-Sad Poetry جولائی 4, 2012
    Ghazal-Sad PoetryFiled under: Bazm-e-Adab, Meri Pasand, My Collection, Pakistani writers, Picture Poetry, Poetry, Poetry Collection, Poetry Urdu Magazine, ROMANTIC POETRY, Sad Poetry, Uncategorized, Urdu, Urdu Khazana, Urdu Magazine, Urdu Poetry, Urdu Point, Urdu Station, Urdu Time, Urdu translation Tagged: ahmed faraz, Bazm-e-Adab, Female Writer, Ikhlaki Ka […]

%d bloggers like this: