حضرت خواجہ حسن بصری رحمتہ اللہ علیہ

جنوری 10, 2011 at 12:21 1 comment

پہلی صدی کے عظیم درویش کے بچپن کے حالات
حضرت خواجہ حسن بصری رحمتہ اللہ علیہ ایک ولی کامل تھے ۔ آپ کو حضرت ام المومنین ام سلمہ رضی اللہ عنہ کا دودھ پینے کا شرف حاصل ہے ۔ کیونکہ آپ کی والدہ حضرت ام المومنین ام سلمہ رضی اللہ عنہ کی کنیز تھیں اور ماں کی مصروفیت کے اوقات میں آپ ان کو اپنا دودھ پلا دیا کرتی تھیں۔ اس طر ح جو قطرات شیر بھی دہن مبارک میں پہنچ جاتے تھے وہی تزکیہ باطن اور رفع منزلت کا باعث بن جاتے تھے ۔ آپ نے حضور آقائے دو جہاں صلی اللہ علیہ وسلم کے مقدس پیالے سے پانی بھی پیا ہے ۔ ان کی گود میں بھی کھیلے ہیں او ر دعائیں بھی لی ہیں ۔ آپ کی والدہ محترمہ جب آپ کو گود میں لیا کرتیں برابر یہ دعا کرتی رہتیں کہ بار الٰہی ! میرے اس بچے کو مقتدائے خلق بنانا۔ آپ کا نام حضرت عمر فاروق رضی اللہ عنہ کا رکھا ہوا ہے ۔ پیدا ہونے کے بعد جب آپ کو حضرت عمر فاروق رضی اللہ عنہ کے سامنے لایا گیا تو انہوں نے آپ کی خوبصورتی دیکھتے ہی فرمایا کہ اس بچہ کا نا م حسن رکھو ۔
ترکِ دنیا کا سبب
ممکن نہ تھا کہ جو بچہ سرکار دو عالم کے گھرمیں پرورش پائے ۔ ام المو منین کا دودھ پئے اور جو عہد نبوت میں پیدا ہو وہ آگے چل کر سرآمد روزگار نہ بنے ۔ آپ اپنی ذہانت کی وجہ سے بہت جلد علوم ظاہری میں کامل ہو گئے اور ہوش سنبھالتے ہی بصرہ میں گوہرفروشی شروع کر دی اور اس تجا رت کو اتنی وسعت دی کہ روم ایران تک جا نے لگے ۔ آپ بہ سلسلہ تجارت روم گئے ہوئے تھے ۔ وہاں وزیراعظم سے ملا قا ت ہو ئی جو آپ کو شہر سے باہر لے گیا دیکھا کہ میدان میں دیبا کا ایک شاندار خیمہ ہے ۔ جس کی ریشمی ڈوریاں طلائی میخوں سے بندھی ہوئی ہیں ۔ فلاسفروں، طبیبوں اور مہ پار ہ کنیزوں کے انبوہ آتے ہیں اور خیمہ کے قریب کچھ کہہ کر چلے جا تے ہیں ۔ چنا نچہ اس طرح قیصر اور قیصرہ بھی آئیں ۔ حضرت نے حقیقت پوچھی ،وزیر اعظم بولا کہ اس خیمہ میں شہزادہ کی لاش رکھی ہے جو مجھ کو نہا یت محبوب تھا ۔ یہ سب یہاں آکر یہ کہتے ہیں کہ اگر دولت سے ،فوج سے، علا ج سے تجھے بچایا جا سکتا تو ضرور بچالیا جاتا ۔ لیکن جس نے تجھ پر موت طاری کی اس کی مرضی کے خلا ف کوئی دم نہیں مار سکتا ۔ یہ سنتے ہی آپ کا دل دنیا کی طرف سے سرد پڑ گیا اور سب کچھ چھوڑ چھاڑ کر عبادت الٰہی میں مصروف ہو گئے ۔
خشیت ا لہٰی اور عجز و انکساری
اب تو یہ حالت تھی کہ را ت دن مجاہدہ و ریا ضت میں مصروف رہتے تھے اور دنیا سے بالکل قطع تعلق کر لیا تھا ۔ ہیبت الٰہی اس درجہ غالب تھی کہ ہمہ وقت لرزاں و ترساں رہتے تھے اور کثیر البکا تھے ۔
ایک دفعہ مسجد کی چھت پر بیٹھ کر اس قدر روئے کہ آنسو پانی کی طر ح پر نالے سے بہہ نکلے۔ اسی طر ح کسی جنازہ کی نماز پڑھائی تو دفن کے بعد ایسی رقت طا ری ہوئی کہ وہاں کی خا ک کیچڑ بن گئی اور فرمایا لوگو! کیوں بھولے ہوئے ہو ۔ اس عالم سے کیوں نہیں ڈرتے جس کی ابتداء یہ قبر ہے ۔ آخر تم سب کو یہ منزل پیش آنی ہے ۔ اس وقت قبرستان میں جتنے لوگ تھے سب زار وقطار رو رہے تھے ۔ خو ف کی یہ شدت اور یہ اتقا، ملاحظہ فرمائیے کہ شباب و جوانی میں نہیں عالم طفولیت میں آپ سے کوئی گناہ سر زد ہو گیا تھا تو جب کوئی کپڑا پہنتے اس کے گریبان پر اسے ثبت کر دیتے اور پھر روتے روتے بےہوش ہوجاتے۔ عجز و انکساری اس درجہ بڑھی ہوئی تھی کہ خود کو ہر انسان سے کم تر سمجھتے تھے ۔ ایک روز آپ نے لب دجلہ ایک حبشی شخص کو ایک عورت کے ساتھ بیٹھے اور ایک صراحی سے کچھ پیتے دیکھا ۔ خیا ل کیا کہ یہ شخص تو ضرور مجھ سے بہتر نہ ہو گا۔ اتنے میں ایک کشتی غر ق ہوئی اور اس نے فوراً کود کر چھ افرا د کو پانی سے نکال لیا اور کہا کہ اگر آپ خو د کو مجھ سے بہتر سمجھتے ہیں تو جہاں میں نے چھ آدمیوں کی جانیں بچائی ہیں ، آپ ایک ہی کو بچا لیتے ۔پھر کہنے لگا کہ حضرت اس صراحی میں محض پانی ہے۔ اور یہ عورت میر ی ماں ہے ۔ یہ سب کچھ آپ کی آزمائش کے لیے تھا کہ آپ کی نظر کا اندازہ کروں آپ اسی وقت متنبہ ہو گئے اور پھر خود کو کسی سے بہتر نہ سمجھا ۔ کسی نے پو چھا آپ بہتر ہیں یا کتا ۔ فرمایا نجات پاﺅں تو اس سے ضرور بہتر ہوں ورنہ ایک کتا مجھ جیسے سینکڑوں سے بہترہے ۔
وصال مبارک
آخری عہد بنی امیہ میں آپ نے وفات پائی ۔ ایک بزرگ نے خواب میں دیکھا کہ آسمان کے دروازے کھلے ہوئے ہیں اور فرشتے منا دی کر رہے ہیں۔ کہ ” حسن خدا تک پہنچ گیا اور وہ ان سے خوش ہوا“ یکم رجب 110ھ کو بصرہ میں وصال ہوا۔

Entry filed under: Blessed Personalities : متبرک ہستیاں. Tags: , , , , .

باطل عقائد و رسومات اور ماہِ صفر ایک نمازی کی آپ بیتی

1 تبصرہ Add your own

  • 1. akaash khan  |  جنوری 18, 2011 کو 11:36

    A allah hamko b hidayat paney walo me se farma de…Ameen.

    جواب دیں

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Connecting to %s

Trackback this post  |  Subscribe to the comments via RSS Feed


A Place For Indian And Pakistani Chatters

Todd Space Social network

زمرے

RSS Urdu Sad Poetry

  • GHAZAL BY SAGHAR SIDDIQUI مارچ 1, 2015
    Filed under: Ghazal, Nazam, Saghir Siddiqui, Urdu Poetry Tagged: FAREB, Ghazal, Ghazal by Saghir Siddiqui, NASHEMAN, Pakistani Poetry Writer, QAYAMAT, Sad Urdu Poetry, SAGHAR, Saghir Siddiqui, SHAGOOFAY, SHETAN, TERI DUNIYA MAI YA RAB, Urdu, Urdu Adab, Urdu Poetry, Urdu shayri, ZEEST
  • چلو اک بار پھر سے اجنبی بن جائیں ہم دونوں فروری 28, 2015
    چلو اک بار پھر سے اجنبی بن جائیں ہم دونوں نہ میں تم سے کوئی امید رکھوں دل نوازی کی نہ تم میری طرف دیکھو غلط انداز نظروں سے تمہیں بھی کوئی الجھن روکتی ھے پیش قدمی سے مجھے بھی لوگ کہتے ہیں کے یہ جلوئے پرائے ہیں میرے ہمراہ اب ہیں رسوائیاں میرے ماضی […] […]
  • Dil main Thkana اکتوبر 6, 2012
    درد کا دل میں ٹھکا نہ ہو گیا زندگی بھر کا تماشا ہو گیا مبتلائے ھم بھی ہو گئے ان کا ہنس دینا بہانا ہو گیا بے خبر گلشن تھا میرے عشق سے غنچے چٹکے راز افشا ہو گیا ماہ و انجم پر نظر پڑنے لگی ان کو دیکھے اک زمانہ ہو گیا تھے نیاز […] […]
  • Ghazal-Sad Poetry ستمبر 9, 2012
    Ghazal-Sad PoetryFiled under: Bazm-e-Adab, Ghazal, Meri Pasand, My Collection, Pakistani writers, Picture Poetry, Poetry, Poetry Collection, ROMANTIC POETRY, Sad Poetry, Uncategorized, Urdu, Urdu Khazana, Urdu Magazine, Urdu Poetry, Urdu Point, Urdu Station, Urdu Time, Urdu translation Tagged: ahmed faraz, Bazm-e-Adab, Female Writer, Ikhlaki Kahanian, Imran […]
  • Ik tere rooth janne say اگست 28, 2012
    تیرے روٹھ جانے سے کوئی فرق نہیں پڑے گا پھول بھی کھلیں گے تارے بھی چمکیں گے مینا بھی برسے گی ھاں مگر کسی کو مسکرانہ بھول جائے گا “اک تیرے روٹھ جانے سے” Filed under: Nazam, Urdu Poetry Tagged: Faraq, ik teray, Indian, Muhabbat, Muskurana, Nahi, Nazam, nazm, Pakistani, Poem, Poetry, Romantic Urdu Poetry, […] […]
  • yadoon ka jhoonka اگست 13, 2012
    یادوں کا اک جھونکا آیا ھم سے ملنے برسوں بعد پہلے اتنا رٰوئے نہیں تھے جتنا روٰئے برسوں بعد لمحہ لمحہ گھر اجڑا ھے، مشکل سے احساس ہوا پتھر آئے برسوں پہلے ، شیشے ٹوٹے برسوں بعد آج ہماری خاک پہ دنیا رونے دھونے بیٹھی ھے پھول ہوئے ہیں اتنے سستے جانے کتنے برسوں بعد […] […]
  • Log Mosam Ki tarah Kaisay Badal Jaty Hain-Urdu Gazhal جولائی 29, 2012
    Log Mosam Ki tarah Kaisay Badal Jaty Hain-Urdu Gazhal Filed under: Bazm-e-Adab, Dil Hai Betaab, Meri Pasand, My Collection, Nazam, Pakistani writers, Picture Poetry, Poetry Collection, Sad Poetry, Urdu Khazana, Urdu Magazine, Urdu Poetry, Urdu Point, Urdu Station, Urdu Time, Urdu translation Tagged: Bazm-e-Adab, Best Urdu Poetry, Dil Hai Betaab, Marsia Sad P […]
  • Mera Qalam Meri Soch Tujh Se Waabasta – Romantic Urdu Poetry جولائی 21, 2012
    MERA QALAM MERI SOCH TUJH SE WAABASTA – ROMANTIC URDU POETRY Mera qalam meri soch tujh se waabasta Meri to zeest ka her rang tujh se waabasta Lab pe jo phool they khushiyon k sab tere hi they Aaj is aankh k aansu b tujh se waabasta Hum kisi b rah pe chalen paas tere […]
  • Kabhi Khawabon Main Milain-Pakistani writers جولائی 12, 2012
    Kabhi Khawabon Main Milain-Pakistani writers Filed under: Pakistani writers Tagged: ahmed faraz, BEST URDU NOVELS, Female Writer, Ikhlaki Kahanian, Imran Series, Islamic Books, Islamic Duayen, Jasoosi Duniya, JASOOSI KAHANIAN, Jasoosi Novels, Mazhar Kaleem, Meri Pasand, My Collection, Night Fighter, Pakistani Writers, PARVEEN SHAKIR, Poetry Collection, roman […]
  • Ghazal-Sad Poetry جولائی 4, 2012
    Ghazal-Sad PoetryFiled under: Bazm-e-Adab, Meri Pasand, My Collection, Pakistani writers, Picture Poetry, Poetry, Poetry Collection, Poetry Urdu Magazine, ROMANTIC POETRY, Sad Poetry, Uncategorized, Urdu, Urdu Khazana, Urdu Magazine, Urdu Poetry, Urdu Point, Urdu Station, Urdu Time, Urdu translation Tagged: ahmed faraz, Bazm-e-Adab, Female Writer, Ikhlaki Ka […]

%d bloggers like this: