سفارش طلب

سفارش طلب سے نمٹنے کے کئی طریقے ہیں. بعض لوگ گلو خلاصی کے لئے نہایت فیاضی سے جھوٹا وعدہ کر دیتے ہیں اور پھر بھول جاتے ہیں، لیکن یہ بزدلوں اور مصلحت کوشوں کا طریقہ ہے. آپ ایسا ہرگز نہ کیجئے گا ورنہ آپ کا بھی وہی حشر ہو گا جو ہمارے دوست کا ہوا. آپ میرے دوست کی کہانی خود اس کی زبانی سنئے:
” ایک مرتبہ میں لاہور میں ایک معمولی سا ٹیچر بن گیا لیکن گاؤں میں مشہور ہو گیا کہ پروفیسر ہو گیا ہوں چنانچہ سفارش کا تانتا لگ گیا. سب سے پہلے ایک پرانے ہم جماعت کامران صاحب آ گئے. بولے”منشی فاضل کا امتحان دیا ہے. دوسرا پرچہ بہت نکمّا ہوا ہے. پروفیسر قاضی صاحب ممتحن ہیں. انہیں کہہ کے پاس کرا دو.”
ایک روایت کے مطابق پروفیسر قاضی صاحب تک ان کی بیوی بھی مشکل سے ہی پہنچتی تھی. میری رسائی سے تو وہ سراسر باہر تھے، لیکن کامران صاحب کو ٹالنے اور کسی حد تک اپنی پرعفیسری کا رعب جمانے کے لئے کہہ دیا.
“ارے قاضی-وہ تو ہمارا لنگوٹیا ہے. تمھیں فرسٹ ڈویژن دلوا دیں گے.”
اس کے بعد کامران سے سرخروئیکی خاطر دُعائیں تو بہت مانگیں لیکن وہ فیل ہو گیا اور جب کامران نے نتیجہ سنا تو فوراً لکھا.”اب گاؤں کبھی نا آنا ورنہ مار ڈالوں گا.” دو ہی دن گزرے تھے کہ میرے ہمسائے مبّشر صاحب اپنے بیٹے کی سفارش لے کر آ دھمکے.بولے.” کاکے جمیل نے میٹرک کا امتحان دیا ہے. ریاضی کا پرچہ تھوڑا گڑبڑ ہو گیا ہے. محسن صاحب کے پاس پرچے ہیں، انہیں اشارہ کر دیجئے گا.”
اشارے کے لفظ سے ظاہر تھا کہ مبّشر صاحب کے ذہن میں میرے رسوخ کا بلندتصور تھا چنانچہ اس وقت تو کہہ دیا کہ فکر نہ کریں مبّشر صاحب محسن صاحب کا کان پکڑ کے لڑکے کو پاس کرا دوں گا. لیکن حقیقت یہ تھی کہ محسن صاحب کے کان میری گرفت سے یکسر باہر تھے. بہر حال مجھے معلوم تھا کہ لڑکا فیل ہی ہو گا. چنانچہ اپنی بریت اور کار گزاری دکھانے کے لئے ایک ترکیب نکالی…. ایک دن مبّشر صاحب اور ان کے بیٹے جمیل کو بلا بھیجا اور کسی قدر جلال میں آ کر مبّشر صاحب سے خطاب کیا.
“واہ مبّشر صاحب واہ. آپ نے ہماری خوب کرکری کرا دی، ہم محسن صاحب کے پاس گئے تو انہوں نے پرچہ نکال کر ہمارے سامنے رکھ دیا اور کہا کہ تم خود ہی انصاف سے جو چاہو نمبر دے دو. اور پرچہ دیکھتا ہوں تو اوٹ پٹانگ لکھا ہے. اکبر کے بیٹے کا نام دین الٰہی تھا اور پرویز لاٹھیں بیچا کرتا تھا، جانگیر کبوتر پالتا تھا، اس کے علاوہ ہجے غلط، املاء خراب. خدا جانے یہ لڑکا پورا سال کیا کرتا رہا ہے؟”
اس پر ہماری کارگزاری سے مطمئن ہو کر مبّشر صاحب نے اپنا ڈنڈا اور جمیل کے رسید کرتے ہوئے فرمایا:
“کم بخت تاش کھیلتا رہا ہے اور کیا کرتا رہا ہے؟”
لیکن کچھ دن بعد جب نتیجہ نکلا تو جمیل پاس ہو گیا اور پھر باپ کا ڈنڈا لے کر میری تلاش میں پھرنے لگا….

مارچ 11, 2012 at 06:55 تبصرہ چھوڑیں

کلمَات خیر و برکت

کوئی کام شروع کرو تو کہو….. (بِسمِ اللہِ) شروع اللہ کے نام سے
چھینک آئے تو کہو ………… ((اَلحَمدُ لِلّٰہِ) سب تعریفیں اللہ کیلئے
اللہ کے نام پر کچھ دو تو کہو ….(فِی سَبِیلِ اللہِ) اللہ کی راہ میں
کچھ کرنے کا ارادہ ہو تو کہو ….(اِن شَاءَ اللہِ) اگر اللہ نے چاہا
کوئی اچھی خبر سنو تو کہو …..(سُبحَانَ اللہِ) اللہ پاک ہے
کسی کو تکلیف ہو تو کہو …….(یَا اَللہُ) اے میرے اللہ
کسی کی تعریف کرنا ہو تو کہو…(مَا شَاءَ اللہ) جو اللہ نے چاہا
سو کر اُٹھو تو کہو ………….(لَآ اِلٰہَ اِلَّا للہُ) اللہ کے سوا کوئی معبود نہیں
شکریہ ادا کرنا ہو تو کہو……..(جَذَاکَ اللہ) اللہ تمھیں بدلہ دے
کسی کو رخصت کرو تو کہو…..( فِی اَمَانِ اللہ) اللہ کی حفاظت میں
جب خوشگواری ہو تو کہو ……(فَتَبَارَکَ اللہ) اللہ برکت والا ہے
غلط کام پر افسوس کرنا ہے تو کہو(اَستَغفِرُ اللہ) اللہ سے معافی چاہتا ہوں
جب ناگواری ہو تو کہو………..(نَعُوذبِااللہ) اللہ کی پناہ درکار ہے
جب مدد درکار ہو تو کہو……….(یَا رَسُولُ اللہ) اے اللہ کے رسول
موت کی خبر سنو تو کہو………(اِنَّا لِلّٰہِ وَ اِنَّا اِلَیہِ رَاجِعُونَ) ہم اللہ کے لئے ہیں اور اللہ کی طرف لوٹ کر جانا ہے.

اگست 24, 2011 at 08:28 تبصرہ چھوڑیں

رمضان المبارک کی طاق راتوں کی عبادات

پہلی شب قدر:
حضُور نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلّم ارشاد فرماتے ہیں کہ میری اُمّت میں سے جو مرد یا عورت یہ خواہش کرے کہ میری قبر نور کی روشنی سے منوّر ہو تو اُسے چاہئیے کہ ماہِ رمضان کی شب قدروں میں کثرت کے ساتھ اللہ کی عبادت بجا لائے تا کہ ان مبارک اور با برکت راتوں کی عبادت سے اللہ تعالٰی اس کے نامئہ اعمال سے بُرائیاں مٹا کر نیکیوں کا ثواب عطا فرمائے.
شب قدر کی عبادت 70 ہزار شب کی عبادتوں سے افضل ہے.
اکیسویں شب کو چار رکعت نماز دو سلام سے پڑھیں. ہر رکعت میں بعد سورۃ الفاتحہ کے سورہ قدر ایک ایک بار اور سُورۂ اخلاص ایک ایک مرتبہ پڑھیں. بعد سلام کے ستّر مرتبہ درُود پاک پڑھیں. انشاء اللہ اس نماز کے پڑھنے والے کے حق میں فرشتے مغفرت کریں گے.
اکیسویں شب کو دو رکعت نماز پڑھیں. ہر رکعت میں سُورۂ فاتحہ کے بعد سورۃ القدر ایک ایک بار اور سورۃ الاخلاص تین تین مرتبہ پڑھیں. بعد سلام کے نماز ختم کر کے 70 مرتبہ استغفار پڑھیں.
ماہِ رمضان المبارک کی اکیسویں شب کو اکیس مرتبہ سورۃ القدر پڑھنا بھی بہت افضل ہے. انشاء اللہ اس نماز اور شب قدر کی برکت سے اللہ تعالٰی اس کی بخشش فرمائے گا.

دوسری شب قدر:
ماہِ رمضان کی تیئیسویں شب کو چار رکعت نفل دو سلام سے پڑھیں اور ہر رکعت میں سورۃ الفاتحہ کے بعد سُورۃ القدر ایک بار اور سورۃ الاخلاص تین تین مرتبہ پڑھیں. انشاء اللہ واسطے مغفرت گناہ کے یہ نماز بہت افضل ہے.
تیئیسویں شب قدر کو آٹھ رکعت نماز چار سلام سے پڑھیں. ہر رکعت میں بعد سورۃ الفاتحہ کے سورۃالقدر ایک ایک مرتبہ اور سورۃ الاخلاص ایک ایک بار پڑھیں. بعد سلام کے 70 مرتبہ کلمہ تمجید پڑھیں اور اللہ تعالٰی سے اپنے گناہوں کی بخشش طلب کریں.اللہ تعالٰی گناہ معاف فرما کر انشاء اللہ مغفرت فرمائے گا.
تیئیسویں شب کو سُورۃ یٰسیٓن ایک مرتبہ سورۃ الرحمٰن ایک مرتبہ پڑھنا بہت افضل ہے.
تیسری شب:
ماہِ رمضان کی پچیس تاریخ کی شب کو چار رکعت نفل دو سلام سے پڑھیں، بعد سورۃ الفاتحہ کے سورۃ القدر ایک ایک مرتبہ اور سورۃ الاخلاص پانچ پانچ مرتبہ ہر رکعت میں پڑھیں. بعد سلام کے کلمہ طیّبہ ایک سو مرتبہ پڑھنا ہے. بارگاہِ الٰہی سے انشاء اللہ بے شمار عبادت کا ثواب عطا ہو گا.
پچیسویں شب کو چار رکعت نماز دو دو سلام سے پڑھیں. ہر رکعت میں سورۃ الفاتحہ کے بعد سورۃ القدر تین تین مرتبہ پڑھیں اور سورۃالاخلاص بھی تین تین مرتبہ پڑھیں. بعد سلام کے 70 مرتبہ استغفار پڑھیں. یہ نماز بخشش گناہ کے لئے بہت افضل ہے.
پچیسویں شب کو دو رکعت نماز پڑھیں، ہر رکعت میں بعد سورۃ الفاتحہ کے سورۃ القدر ایک ایک مرتبہ اور سورۃ الاخلاص پندرہ پندرہ مرتبہ پڑھیں. بعد سلام کے ستّر مرتبہ کلمہ شہادت پڑھیں. یہ نماز واسطے نجات عزاب قبر بہت افضل ہے.
پچیسویں شب کو سات مرتبہ سورہ دخان پڑھیں. انشاء اللہ تعالٰی پروردگارِ عالم اس سورۃ کے پڑھنے کے باعث عزاب قبر سے محفوظ رکھے گا.

پچیسویں شب کو سات مرتبہ سورۂ فتح پڑھنا واسطے ہر مراد کے بہت افضل ہے.
چوتھی شب قدر:
ستائیسویں شب قدر کو بارہ رکعت نماز تین سلام سے پڑھیں. ہر رکعت میں بعد سورۃ الفاتحہ سورۂ قدر ایک ایک مرتبہ، سورۂ اخلاص پندرہ پندرہ مرتبہ پڑھنی چاہئیے. اللہ تعالٰی اس نماز کے پڑھنے والے کو نبیوں کی عبادت کا ثواب عطا فرمائے گا. (سبحٰن اللہ) انشاء اللہ تعالٰی.
ستائیسویں شب کو دو رکعت نماز پڑھیں. ہر رکعت میں سورۂ فاتحہ کے بعد سورۂ قدر تین تین مرتبہ اور سورۂ اخلاص ستائیس مرتبہ پڑھیں. یہ نماز پڑھ کر اپنے گناہوں کی مغفرت کی دُعا مانگیں. انشاء اللہ تعالٰی پچھلے سارے گناہ اللہ تعالٰی معاف فرمائے گا.
ستائیسویں شب کو چار رکعت نفل دو سلام سے پڑھیں. ہر رکعت میں بعد سورۃ الفاتحہ کے سورۃ التکاثر ایک ایک مرتبہ اور سورۃ الاخلاص تین تین مربتہ پڑھیں. اس نماز کے پڑھنے والے پر اللہ تعالٰی موت کی سختی آسان کرے گا. انشاء اللہ اس پر سے عزابِ قبر بھی معاف ہو جائے گا.
ستائیسویں شب کو دو رکعت نماز پڑھیں. ہر رکعت میں سورۃ الفاتحہ کے بعد سورۃ الاخلاص سات سات مرتبہ پڑھیں. بعد سلام کے ستّر دفعہ یہ تسبیحِ معّظم پڑھیں:
اَستَغفِرُاللہَ العَظِیمَ الَّذِیٓ لَآ اِ لٰھَ اِلَّا ھُوَ الحَیُّ القَیُّومُ وَ اَ تُوبُ اِلَیھِ
انشاء اللہ اس نماز کو پڑھنے والا اپنے مصلٰے سے نہ اُٹھے گا کہ اللہ تعالٰی اس کے اور اس کے والدین کے گناہ معاف فرما کر مغفرت فرمائے گا اور اللہ تعالٰی فرشتوں کو حکم دے گا کہ اس کے لئے جنّت آراستہ کرو اور فرمایا کہ وہ جب تک تمام جنتی تعمتیں اپنی آنکھ سے نہ دیکھ لے گا اس وقت تک موت نہ آئے گی. واسطے مغفرت یہ نماز بہت ہی افضل ہے.
ستائیسویں شب قدر کو دو رکعت نماز پڑھیں . ہر رکعت میں سورۃ الفاتحہ کے بعد الم نشرح ایک ایک بار، سورۂ اخلاص تین تین مرتبہ پڑھیں. بعد سلام ستائیس مرتبہ سورۂ قدر پڑھیں.
انشاء اللہ واسطے ثواب بیشمار عبادت کے یہ نماز بہت افضل ہے.
ستائیسویں شب کو چار رکعت نماز پڑھیں. ہر رکعت میں سورۂ فاتحہ کے بعد سورۂ قدر تین تین مرتبہ، سورۂ اخلاص پچاس پچاس مرتبہ پڑھیں. بعد سلام سجدہ میں سر رکھ کر ایک کرتبہ یہ کلمات پڑھیں:
سُبحَانَ اللہِ وَالحَمدُلِلّٰھِ وَلَآ اِلٰھَ اِلَّا اللہُ وَ اللہُ اَکبَرُ
اس کے بعد جو حاجت دنیاوی یا دینوی طلب کریں گے وہ انشاء اللہ بارگاہِ الٰہی میں قبول منظور ہو گی.
ستائیسویں شب کو سورۂ ملک سات مرتبہ پڑھنی واسطے مغفرت گناہ بہت فضیلت والی ہے.
پانچویں شبِ قدر:
انتیسویں شب کو چار رکعت نماز دو سلام سے پڑھیں. ہر رکعت میں سورۂ فاتحہ کے بعد سورۂ قدر ایک ایک مرتبہ ، سُورۂ اخلاص تین تین مرتبہ پڑھیں. بعد سلام کے سورۃ الم نشرح ستّر مرتبہ پڑھیں. یہ نماز واسطے کامل ایمان کے بہت افضل ہے.
انشاء اللہ تبارک و تعالٰی اس نماز کے پڑھنے والے کو دنیا سے مکمل ایکان کے ساتھ اُٹھایا جائے گا.
ماہِ رمضان کی انتیسویں‌شب کو چار رکعت نماز دو سلام سے پڑھیں. ہر رکعت میں بعد سورۃالفاتحہ کے سورۃ القدر ایک ایک بار اور سورۃ الاخلاص پانچ پانچ مرتبہ پڑھیں. بعد سلام کے درُود پاک ایک سو مرتبہ پڑھیں.
انشاء اللہ اس نماز کے پڑھنے والے کو بارگاہِ الٰہی سے بخشش اور مغفرت عطا کی جائے گی.
ماہِ رمضان المبارک کی انتیسویں شب کو سات مرتبہ سُورۃ الواقعہ پڑھیں. انشاء اللہ ترقیِ رزق کے لئے بہت افضل ہے.
ماہِ رمضان کی کسی شب میں بھی بعد نماز عشاء سات مرتبہ سورۃ القدر پڑھنا بہت افضل ہے. انشاء اللہ تعالٰی اس کے پڑھنے سے ہر مصیبت سے نجات حاصل ہو گی.
اللہ تعالٰی ہم سب کے ہر قدم کو بُرائی کے راستے سے ہٹا کر مستحکم ایمان کے راستے پر لے آئے اور اپنے حفظ و امان میں رکھے. (آمین)
طالبِ دُعا…

اگست 22, 2011 at 08:30 تبصرہ چھوڑیں

نوافل نماز

نماز اشراق
اس نماز کی بہت ہی زیادہ فضیلت ہے، ہمیشہ پڑھنے والے کے سب گناہ بخشے جاتے ہیں، اگرچہ سمندر کی جھاگ کے برابر ہوں، اور اس کے واسطے جنت میں سونے کا محل ہو گا، اس نماز کی کم از کم دو رکعتیں اور زیادہ سے زیادہ بارہ رکعتیں ہیں. افضل بارہ ہیں. اس کا وقت آفتاب بلند ہونے سےزوال تک ہوتا ہے.
نماز تسبیح
اس نماز کا بے انتہا اجر و ثواب ہے اور اس کی چار رکعتیں ہیں. مکروہ وقت کے علاقہ جب چاہیں پڑھ سکتے ہیں. افضل یہ ہے کہ ظہر سے پہلے پڑھیں. اس کا طریقہ یہ ہے کہ تکبیر رحریمہ کے بعد ثناء پڑھیں، ثناء کے بعد یہ کلمہ پندرہ بار پڑھیں:
“تیسرا کلمہ وَاللہُ اَکبَر تک” پندرھویں مرتبہ کلمہ پورا پڑھیں.
پھر تعوذ اور تسمیہ اور کوئی سورۃ پڑھ کر رکوع میں جا کر رکوع کی تسبیح کے بعد دس بار پھر یہی کلمہ پڑھیں، پھر رکوع سے اُٹھ کر تسمیع و تمحید کے بعد دا بار یہی کلمہ پڑھیں، پھر سجدے میں جا کر سجدے کی تسبیح کے بعد دس بار، پھر سجدے سے اُٹھ کر دس بار جلسہ میں، پھر دوسرے سجدے میں تسبیح کے بعد دس بار یہی کلمہ پڑھیں. پھر دوسرے رکعت میں فاتحہ سے پہلے پندرہ بار اور پھر اسی ترتیب سے پڑھیں. ہر رکعت میں 75 بار اور چار رکعتوں میں 300 مرتبہ پڑھنا ہے.
نماز تھجد
عشاء کی نماز کے بعد رات کو سو کر اُٹھنے کے بعد جو نماز پڑھی جاتی ہے اسے تہجد کہتے ہیں. اس نماز کی بڑی فضیلت ہے. اس کی کم از کم دو رکعتیں اور زیادہ سے زیادہ بارہ رکعتیں ہیں.
نماز سفر
سفر میں جاتے وقت دو رکعت اپنے گھر میں پڑھ کر جانا اور سفر سے واپس آ کر پہلے دو رکعتیں مسجد میں ادا کرنا پھر گھر جانا مسنون اور بہت ہی مبارک ہے.

اگست 20, 2011 at 12:15 تبصرہ چھوڑیں

سنہری باتیں

  • فکر کے درخت کو صبر کا پانی دیتے رہنا چاہیے تا کہ آنے والی نسلیں خوشحال زندگی بسر کریں.
  • زندگی گزارنے کا صحیح لطف اسی میں ہے کہ آپ کا دل محبت اور دماغ عقل سے بھرا ہو.
  • بلندی سے کھڑے ہو کر نیچے حقارت سے مت دیکھیں بلکہ یہ سوچیں کہ کبھی آپ بھی نیچے کھڑے تھے.
  • کسی پر کیچڑ مت اُچھالو اس سے دوسروں کے کپڑے خراب ہوں یا نہ ہوں مگر تمھارے ہاتھ ضرور خراب ہو جائیں گے.
  • جو چھوٹے ہاتھ سے دیتا ہے وہ لمبے ہاتھ سے پاتا ہے.
  • مانگو گے تو تمھیں دیا جائے گا، ڈھونڈو گے تو پاؤ گے.
  • علم ایسا بادل ہے جس سے رحمت ہی رحمت برستی ہے.
  • ظاہر پر نا جا، آگ دیکھنے میں سرخ لگتی ہے پر اس کا جلایا ہوا سیاہ ہو جاتا ہے.
  • مشاہدے سے آپ بہت کچھ جان سکتے ہیں مگر سیکھتے تجربے سے ہی ہیں.
  • سکھ خوشی کا نام نہیں، غم اور خوشی دونوں سے بے نیاز ہونے کا نام ہے.
  • کہنے والا یقین سے محروم ہو تو سننے والا تاثیر سے محروم رہتا ہے.
  • موت کو یاد رکھنا نفس کی تمام بیماریوں کی دوا ہے.
  • علم کی طلب میں شرم مناسب نہیں، جہالت شرم سے بد تر ہے.

اگست 17, 2011 at 12:09 تبصرہ چھوڑیں

Maan Ki Dua

اگست 15, 2011 at 12:19 تبصرہ چھوڑیں

Ramzan k Lye Duayen

اگست 12, 2011 at 11:44 تبصرہ چھوڑیں

Older Posts


A Place For Indian And Pakistani Chatters

Todd Space Social network

زمرے

RSS Urdu Sad Poetry

  • GHAZAL BY SAGHAR SIDDIQUI مارچ 1, 2015
    Filed under: Ghazal, Nazam, Saghir Siddiqui, Urdu Poetry Tagged: FAREB, Ghazal, Ghazal by Saghir Siddiqui, NASHEMAN, Pakistani Poetry Writer, QAYAMAT, Sad Urdu Poetry, SAGHAR, Saghir Siddiqui, SHAGOOFAY, SHETAN, TERI DUNIYA MAI YA RAB, Urdu, Urdu Adab, Urdu Poetry, Urdu shayri, ZEEST
  • چلو اک بار پھر سے اجنبی بن جائیں ہم دونوں فروری 28, 2015
    چلو اک بار پھر سے اجنبی بن جائیں ہم دونوں نہ میں تم سے کوئی امید رکھوں دل نوازی کی نہ تم میری طرف دیکھو غلط انداز نظروں سے تمہیں بھی کوئی الجھن روکتی ھے پیش قدمی سے مجھے بھی لوگ کہتے ہیں کے یہ جلوئے پرائے ہیں میرے ہمراہ اب ہیں رسوائیاں میرے ماضی […] […]
  • Dil main Thkana اکتوبر 6, 2012
    درد کا دل میں ٹھکا نہ ہو گیا زندگی بھر کا تماشا ہو گیا مبتلائے ھم بھی ہو گئے ان کا ہنس دینا بہانا ہو گیا بے خبر گلشن تھا میرے عشق سے غنچے چٹکے راز افشا ہو گیا ماہ و انجم پر نظر پڑنے لگی ان کو دیکھے اک زمانہ ہو گیا تھے نیاز […] […]
  • Ghazal-Sad Poetry ستمبر 9, 2012
    Ghazal-Sad PoetryFiled under: Bazm-e-Adab, Ghazal, Meri Pasand, My Collection, Pakistani writers, Picture Poetry, Poetry, Poetry Collection, ROMANTIC POETRY, Sad Poetry, Uncategorized, Urdu, Urdu Khazana, Urdu Magazine, Urdu Poetry, Urdu Point, Urdu Station, Urdu Time, Urdu translation Tagged: ahmed faraz, Bazm-e-Adab, Female Writer, Ikhlaki Kahanian, Imran […]
  • Ik tere rooth janne say اگست 28, 2012
    تیرے روٹھ جانے سے کوئی فرق نہیں پڑے گا پھول بھی کھلیں گے تارے بھی چمکیں گے مینا بھی برسے گی ھاں مگر کسی کو مسکرانہ بھول جائے گا “اک تیرے روٹھ جانے سے” Filed under: Nazam, Urdu Poetry Tagged: Faraq, ik teray, Indian, Muhabbat, Muskurana, Nahi, Nazam, nazm, Pakistani, Poem, Poetry, Romantic Urdu Poetry, […] […]
  • yadoon ka jhoonka اگست 13, 2012
    یادوں کا اک جھونکا آیا ھم سے ملنے برسوں بعد پہلے اتنا رٰوئے نہیں تھے جتنا روٰئے برسوں بعد لمحہ لمحہ گھر اجڑا ھے، مشکل سے احساس ہوا پتھر آئے برسوں پہلے ، شیشے ٹوٹے برسوں بعد آج ہماری خاک پہ دنیا رونے دھونے بیٹھی ھے پھول ہوئے ہیں اتنے سستے جانے کتنے برسوں بعد […] […]
  • Log Mosam Ki tarah Kaisay Badal Jaty Hain-Urdu Gazhal جولائی 29, 2012
    Log Mosam Ki tarah Kaisay Badal Jaty Hain-Urdu Gazhal Filed under: Bazm-e-Adab, Dil Hai Betaab, Meri Pasand, My Collection, Nazam, Pakistani writers, Picture Poetry, Poetry Collection, Sad Poetry, Urdu Khazana, Urdu Magazine, Urdu Poetry, Urdu Point, Urdu Station, Urdu Time, Urdu translation Tagged: Bazm-e-Adab, Best Urdu Poetry, Dil Hai Betaab, Marsia Sad P […]
  • Mera Qalam Meri Soch Tujh Se Waabasta – Romantic Urdu Poetry جولائی 21, 2012
    MERA QALAM MERI SOCH TUJH SE WAABASTA – ROMANTIC URDU POETRY Mera qalam meri soch tujh se waabasta Meri to zeest ka her rang tujh se waabasta Lab pe jo phool they khushiyon k sab tere hi they Aaj is aankh k aansu b tujh se waabasta Hum kisi b rah pe chalen paas tere […]
  • Kabhi Khawabon Main Milain-Pakistani writers جولائی 12, 2012
    Kabhi Khawabon Main Milain-Pakistani writers Filed under: Pakistani writers Tagged: ahmed faraz, BEST URDU NOVELS, Female Writer, Ikhlaki Kahanian, Imran Series, Islamic Books, Islamic Duayen, Jasoosi Duniya, JASOOSI KAHANIAN, Jasoosi Novels, Mazhar Kaleem, Meri Pasand, My Collection, Night Fighter, Pakistani Writers, PARVEEN SHAKIR, Poetry Collection, roman […]
  • Ghazal-Sad Poetry جولائی 4, 2012
    Ghazal-Sad PoetryFiled under: Bazm-e-Adab, Meri Pasand, My Collection, Pakistani writers, Picture Poetry, Poetry, Poetry Collection, Poetry Urdu Magazine, ROMANTIC POETRY, Sad Poetry, Uncategorized, Urdu, Urdu Khazana, Urdu Magazine, Urdu Poetry, Urdu Point, Urdu Station, Urdu Time, Urdu translation Tagged: ahmed faraz, Bazm-e-Adab, Female Writer, Ikhlaki Ka […]

Follow

Get every new post delivered to your Inbox.

Join 38 other followers